Yazar E Mianwali

ZINDAGI KA MUMTAHIN

ZINDAGI KA MUMTAHIN

زندگی کا ممتحن تحریر: محمد قمر الحسن بھروں زادہ   2009 میں گورنمنٹ کالج میانوالی کے رحمت اللعالمین آڈیٹوریم میں پنجاب یونیورسٹی کے زیر اہتمام بی ایس سی کے سالانہ امتحانات شروع تھے۔ میرا آج آخری پیپر تھا۔کیمسٹری کے پہلے دو پیپر فزیکل کیمسٹری اور ان آرگینک کیمسٹری کے پیپر میرے پلان کے عین مطابق …

ZINDAGI KA MUMTAHIN Read More »

Afghan Nationalism and Us

Afghan Nationalism and Us

افغان نیشنلزم اور ہم تحریر: محمد قمر الحسن بھروں زادہ نیشنلزم (قوم پرستی)کی قدیم تاریخ ہے لیکن نیشنلزم کی تحریک کو باقاعدہ عروج و دوام بیسویں صدی کے آغاز اور پہلی جنگ عظیم سے حاصل ہوا اور اسکی عملی توثیق دوسری جنگ عظیم کے بعد ہو گئی۔یہ انھی اور انہی جیسی تحریکوں کا نتیجہ تھا …

Afghan Nationalism and Us Read More »

SAFAR JO AMAR HOWA

SAFAR JO AMAR HOWA

سفر جو اَمر ہوا تحریر: قمرالحسن بھروں زادہ چشمہ جھیل کے خاموش پانیوں میں دور ایک کشتی ساکت کھڑی تھی۔ زیادہ تر سندھی مچھیرے واپس اپنے چھپروں میں جا چکے تھے۔ ہماری رواں گاڑی میں بھی انجانے خوف تلے دبی پر اسرار سی خاموشی پھیلی تھی۔ سٹیئرنگ پہ ہاتھوں کی کمزور گرفت کے ساتھ میں …

SAFAR JO AMAR HOWA Read More »

BHARION WALA

BHARION WALA

پیارا بھریوں والا تحریر: قمرالحسن بھروں زادہ بھریوں والا کے متعلق لکھتے وقت دل خوشی سے مسرور ہے اور بھریوں والا جب جانا ہوتا ہے تو کیفیات کا عجب ہی عالم ہوتا ہے۔ گفتگو کوئی بھی ہو میری زندگی میں دو ہی گاؤں ہیں جن کا ذکر میں دانستہ بھی چھیڑتا ہوں اور نادانستہ بھی۔ …

BHARION WALA Read More »

ABBA THEEK AH DA HIGH – OYE IKKA THEEK AH DA HIGH

ABBA THEEK AH DA HIGH – OYE IKKA THEEK AH DA HIGH

  ابا ٹھیک آہدا ہائی،  اوئے اکا ٹھیک آہدا ہائی تحریر: محمد قمر الحسن بھروں زادہ   کل سوشل میڈیا پہ امجد نواز کارلو کی آواز میں ایک گانا سننے کا اتفاق ہوا جسکے ابتدائی بول کچھ یوں تھے۔ روندے ودے آں ڈے ڈے دہائی ساڈے پلے کوئی شئے نہ رئی کیڑھے شناء ، کیڑھی …

ABBA THEEK AH DA HIGH – OYE IKKA THEEK AH DA HIGH Read More »

Yazar E Mianwali- Qamar Ul Hassan Bharo’nzada

Yazar E Mianwali- Qamar Ul Hassan Bharo’nzada

قمر الحسن بھرو نزادہ کی تحریروں( “یازار میانوالی” ) سے لطف اندوز ہوں  .ہم قمر الحسن بھرو نزادہ کا  شکریہ ادا کرتے ہیں کہ انہوں نے اپنے قارئین اور چاہنے والوں کے لیے اپنا کام شیئر کیا .   براہ کرم  کالم  پڑھنے کے لیے  کالم کے نام پر کلک کریں۔

QAMAR UL HASSAN BHARO’NZADA

QAMAR UL HASSAN BHARO’NZADA

I thinks Giuseppe Mazzini said these  words for Qamar Ul Hassan Bharo’nzada ,keeping in view his love for Mianwali and Mianwalians .“Love your country. Your country is the land where your parents sleep, where is spoken that language in which the chosen of your heart, blushing, whispered the first word of love; it is the …

QAMAR UL HASSAN BHARO’NZADA Read More »